تازہ ترین
ہوم / اہم خبریں / اعظم سواتی کے استعفے کا معاملہ، وزیراعظم کی سفارش پر صدرمملکت نے فیصلہ سنادیا

اعظم سواتی کے استعفے کا معاملہ، وزیراعظم کی سفارش پر صدرمملکت نے فیصلہ سنادیا

اسلام آباد(نیوزڈیسک) اعظم سواتی کا بطور وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی استعفیٰ منظور کر لیا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی اعظم سواتی کا بطور وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی استعفیٰ منظور کر لیا گیا ہے۔ صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے وزیراعظم عمران خان کی سفارش پر اعظم سواتی کا استعفیٰ منظور کیا جس کے بعد کابینہ ڈویژن نے اعظم سواتی کا بطور وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی استعفیٰ منظور کیے جانے کا نوٹی فکیشن بھی جاری کر دیا۔نوٹی فکیشن کے مطابق اعظم سواتی کے استعفے کی منظوری کا اطلاق 6 دسمبر 2018ء سے ہو گا ۔ اعظم سواتی نے اپنی وزارت سے 6 دسمبر 2018ء کو ہی استعفیٰ دیا تھا۔ ان کے

استعفے کی منظوری کا نوٹی فکیشن ایک ماہ تین دن بعد جاری کیا گیا ۔خیال رہے کہ اعظم سواتی نے 6 دسمبر 2018ء کو بطور وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی استعفیٰ دیا تھا۔ لیکن ایک ماہ کا عرصہ گزر جانے کے باوجود اعظم سواتی کا استعفیٰ منظور ہونے کا کوئی نوٹی فکیشن جاری نہیں کیا گیا تھا۔کابینہ ڈویژن کی دستاویزات کے مطابق 25 وفاقی وزراء کی فہرست میں استعفیٰ جمع کروانے والے وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی اعظم سواتی کا نام 24 ویں نمبر پر درج تھا۔ اعظم سواتی کا استعفیٰ منظور ہونے کا نوٹی فکیشن جاری نہ ہونے پر چیف جسٹس نے بھی ریمارکس دیتے ہوئے کہا تھا کہ اعظم سواتی کے خلاف کچھ نہیں کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ ابھی تک اعظم سواتی کا نام وزارت کی فہرست میں شامل ہے۔ایک شخص صادق اور امین ہی نہیں ہےتو وہ کیسے رکن قومی اسمبلی رہ سکتا ہے۔ میری ریٹائرمنٹ کے دن گنے جا رہے ہیں۔ جس کے بعد آج اعظم سواتی کا استعفیٰ منظور کر کے کابینہ ڈویژن کی جانب سے نوٹی فکیشن بھی جاری کر دیا گیا ہے۔ یاد رہے کہ وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت ہونے والے اجلاس میں آئی جی اسلام آباد تبادلہ کیس اور شہری نیاز احمد سمیت 5 افراد کے خلاف مقدمہ کا معاملہ زیر غور آیا جس پر اجلاس کے دوران اعظم سواتی نے وزیراعظم کو کہا تھا کہ اگر آپ کہیں تو میں استعفیٰ دے دوں گا۔تاہم کچھ دیر بعد ہی یہ اطلاع موصول ہوئی کہ اعظم سواتی نے وزارت سے استعفیٰ دے دیا ہے اور اپنا استعفیٰ وزیراعظم عمران خان کو بھجوا دیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ میں موجودہ حالات میں عہدے پر کام نہیں کر سکتا بغیر اتھارٹی کے اپنے کیس کا دفاع کروں گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *