تازہ ترین
ہوم / پاکستان / مضرصحت کھانے سے ہلاکت کا معاملہ، بچوں کے خون پر سمجھوتہ ہوگیا، والدین نےملزمان کو کیا کہہ کر معاف کردیا

مضرصحت کھانے سے ہلاکت کا معاملہ، بچوں کے خون پر سمجھوتہ ہوگیا، والدین نےملزمان کو کیا کہہ کر معاف کردیا

کراچی (نیوز ڈیسک) کراچی کے علاقہ کلفٹن میں مضرصحت کھانا کھانے سے دو بچوں کی ہلاکت کے معاملے پر فریقین میں سمجھوتہ ہو گیا۔ تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقہ کلفٹن میں مقامی ریسٹورنٹ میں مضر صحت کھانا کھانے سے دو کم سن بچوں کی ہلاکت ہوئی جس کے بعد دو ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا تھا۔ تاہم اب ہلاک ہونے والے ڈیڑھ سالہ احمد اور 5 سالہ محمد کے والدین نے ملزمان کو معاف کر دیا ہے۔عدالت نے سمجھوتے کی نقول ٹرائل کورٹ میں پیش کرنے کی ہدایت بھی کر دی۔ کلفٹن کے ریسٹورنٹ میں مضر صحت کھانے کے بعد دو بچوں کی ہلاکت کے کیس میں گرفتار دو ملزمان کی درخواست ضمانت پر سندھ ہائی کورٹ میں سماعت ہوئی۔ سماعت کے دوران مضر صحت کھانا کھانے سے ہلاک ہونے والے بچوں کے والدین عدالت میں پیش ہوئِے اور موقف دیا کہ ہم نے اپنے بچوں کی ہلاکت کے ذمہ داروں کو معاف کردیا ہے۔لہٰذا ہم اب اس

کیس پر کوئی کارروائی نہیں چاہتے، جس پر خواجہ نوید ایڈووکیٹ نے کہا کہ فریقین میں سمجھوتہ ہوگیا ہے۔ عدالت نے سمجھوتے کی نقول ٹرائل کورٹ میں پیش کرنے کی ہدایت کر دی۔ رپورٹ کے مطابق ریسٹورنٹ میں زائد المعیاد گوشت میں “ایکولائی” کی مقدار5400 اور2300 پائی گئی تھی۔ مستند لیبارٹری کی رپورٹ کے مطابق اموات “ایکولائی” کی مقدار کی زیادتی کی وجہ سے ہوئیں۔مضر صحت کھانا کھانے سے دو کم سن بچوں کی ہلاکت پر وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے بھی نوٹس لیا تھا جس کے بعد پولیس نے تحقیقات کا آغاز کیا اور ملزمان کو گرفتار کیا گیا۔ وزیراعلیٰ سندھ کو واقعہ کی ابتدائی رپورٹ پیش کی گئی جس میں بتایا گیا کہ سندھ فوڈ اتھارٹی نے ریسٹورنٹ کے کھانے کے نمونے حاصل کرنے کے بعد ریسٹورنٹ کو سیل کر دیا۔ واقعہ کے ذمہ داران کو کڑی سزا دینے کا مطالبہ کیا جا رہا تھا تاہم اب ہلاک بچوں کے والدین نے ملزمان کو معاف کر دیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *