تازہ ترین
ہوم / پاکستان / غربت پر قابو پانے کیلئے عمران خان کا فارمولاکام کرگیا، مرغبانی کا منصوبہ کس طرح لوگوں کی زندگیاں بدلنے لگا، جانئے

غربت پر قابو پانے کیلئے عمران خان کا فارمولاکام کرگیا، مرغبانی کا منصوبہ کس طرح لوگوں کی زندگیاں بدلنے لگا، جانئے

لاہور(نیوز ڈیسک)غربت پر قابو پانے کے لیے وزیراعظم عمران خان کا فارمولا کام کر گیا، عمران خان کی جانب سے پیش کیا گیا منصوبہ پنجاب میں مقبول ہونے لگا۔تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے سو روزہ کارکردگی کے حوالے سے منعقدہ تقریب میں مرغبانی کے منصوبے پر بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ یہ منصوبہ غربت کو بھگا دے گا اور اس کے تحت ہم دیہاتی خواتین کو دیسی انڈے اور مرغیاں دیں گے اور وہ اس کی افزائش سے آمدنی حاصل کریں گی۔تاہم انکی جانب سے یہ مشورہ سامنے آیا تو مخالفین نے اس کا شدید مذاق اڑایا اور سوشل میڈیاصارفین نے بھی اس پر ٹرولنگ شروع کر دی ۔تاہم میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ پانچ مرغیوں اور ایک مرغے پر مشتمل یونٹ

1200روپے میں ہاتھوں ہاتھ فروخت ہو رہا ہے۔ایک یونٹ حاصل کرنے کے لیے شناختی کارڈ کی کاپی دکھانی ہوتی ہے۔خواتین کی بہت بڑی تعداد اس منصوبے سے مستفید ہو رہی ہے۔خواتین کا کہنا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کی طرف سے شروع کی گئی یہ سکیم بہت اچھی ہے۔دیسی مرغیاں حاصل کرنے والی خواتین کو یقین ہے کہ اس منصوبے سے غذائی قلت اور معاشی مشکلات پر قابو پانے میں مدد ملے گی۔خواتین کا کہنا ہے کہ ہم دیسی مرغیاں پالیں گے اور جب وہ انڈیں دیں گی تو ہم اپنے بچوں کو کھلائیں گے۔اس منصوبے کا مقصد دیہی علاقوں کی خواتین میں گھریلو سطح پر غربت سے نمٹنے کے لیے مواقع فراہم کرنا ہے تاکہ وہ اس کی افزائش سے آمدنی حاصل کر سکیں۔واضح رہے وزیراعظم عمران خان کی جانب سے غربت مٹاؤ پروگرام کا اعلان کیا تھا تاہم اس میں مرغیوں اور انڈوں کے ذکر سے مخالفین نے مذاق اڑنا شروع کر دیا تاہم جس چیز کا مذاق ہمارے ملک میں بناا جا رہا ہے عالمی میڈیا اسی کی تعریف کر رہا ہے۔ واشنگٹن پوسٹ میں شائع شدہ آرٹیکل میں وزیراعظم عمران خان کے غربت مٹاؤ پروگرام کی تعریف کی گئی تھی۔آرٹیکل میں لکھا گیا ہے غریب اور ورکنگ کلاس نے مرغیوں کے منصوبے پر خوشی کا اظہارکیا ہے۔انہوں نے خوشحال خاندانوں نے بھی غریبوں کی حالت بہتر کرنے کی ترجیح کو سراہا۔منصوبے کا مقصد غریب گھرانے کو آمدنی کاذریعہ مہیا کرنا ہے۔ آرٹیکل کےمطابق غریب گھرانے اس منصوبے سے فائدہ اٹھانا چاہتے ہیں جب کہ شہری گھرانے بھی منصوبے میں دلچسپی رکھتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *