تازہ ترین
ہوم / پاکستان / رہائی اور مقدمات ختم کرانے کیلئے شریف برادران کوایک اور آپشن مل گیا، پلی بارگین کی بجائے بڑی پیشکش کردی گئی

رہائی اور مقدمات ختم کرانے کیلئے شریف برادران کوایک اور آپشن مل گیا، پلی بارگین کی بجائے بڑی پیشکش کردی گئی

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے سینئرصحافی ارشاد عارف نے کہا کہ نواز شریف اور شہباز شریف کی رہائی کے لیے آئینی اور قانونی طریقہ کار موجود ہے جو پلی بارگین کا پہے ، اگر یہ دونوں خاندان لوٹی ہوئی رقم کا ستر فیصد دے دیتے ہیں تو یہ دونوں چھوٹ سکتے ہیں اور ان کے پاس ایک قانون راستہ موجود ہے جو اختیار کیا جا سکتا ہے۔لیکن مسئلہ یہ ہے کہ یہ لوگ پلی بارگین پر آمادہ نہیں ہیں اور ان کا ماننا ہے کہ یہ لوگ پیسے تو دیں گے لیکن کسی اور طریقہ سے دیں گے تاکہ ہمیں مجرم ڈکلئیر نہ کیا جائے اور ان کی رہائی میں اب یہی ایک رکاوٹ ہے۔ جہاں تک فیصلے کا تعلق ہے تو سپریم کورٹ آبزرویشن دے چکی ہے اور آپ جس بھی قانون دان سے بات کریں گے تو وہ بھی آپ کو یہی کہے گا کہ جب بھی آپ سزا کے خلاف اپیل کر رہے ہوں تو کبھی بھی میرٹ پر بات نہیں کرتے۔میرٹ پر بات تب ہوتی ہے جب آپ نے کسی کو بری

کرنا ہو۔ چالیس صفحوں کا جو فیصلہ لکھا گیا ہے اس حوالے سے تمام قانون دان کہتے ہیں کہ یہ ایک ایسا فیصلہ ہے جو ایک منٹ میں اُڑایا جا سکتا ہے۔ اب چونکہ یہ نیب کا کیس ہے اور اپیل کے خلاف ہے تو اگر سپریم کورٹ بادی النظر میں یہ سمجھتی ہے کہ ہائیکورٹ نے اپنی حدود سے تجاوز کیا ہے اور احتساب کورٹ کے فیصلے کو نہ تو صحیح سے پڑھا اور نہ ہی صحیح سے پرکھا تو ایک یا دو دن میں فیصلہ آجائے گا۔واضح رہے کہ نیب نے سابق وزیر اعظم نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن صفدر کی ضمانت معطلی کے لیے اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف اپیل سپریم کورٹ میں دائر کر رکھی ہے جس پر آج سماعت ہو گی۔ جبکہ سابق وزیراعظم نواز شریف العزیزیہ ریفرنس میں سزا پانے کے بعد کوٹ لکھپت جیل میں قید ہیں۔ اور العزیزیہ ریفرنس کیس کے فیصلے کے خلاف سابق وزیراعظم نواز شریف کی جانب سے دائر کی جانے والی اپیل پر سماعت 21 جنوری کو ہو گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *