ہوم / علاقائی / مجھےبچیوں کو اغواء کرنے میں ایک منٹ بھی نہیں لگتا،اغواء ہونیوالی بچی کو کہاں بھیج دیا جاتا ہے، گرفتار خاتون کے لرزہ خیز انکشافات

مجھےبچیوں کو اغواء کرنے میں ایک منٹ بھی نہیں لگتا،اغواء ہونیوالی بچی کو کہاں بھیج دیا جاتا ہے، گرفتار خاتون کے لرزہ خیز انکشافات

لاہور(نیوز ڈیسک) جسم فروش خواتین کم عمر لڑکیوں کو اغوا کر کے اپنے مذموم مقاصد کے لیے استعمال کرنے لگیں ۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان ریلوے پولیس لاہور ڈویژن کی بروقت کارروائی میں ایک جسم فروش گینگ کو گرفتار کیا گیا جس میں ملوث افراد نے چشم کُشا انکشافات کر دئے۔ گروہ کی سرگرم رکن خاتون کا کہنا تھا کہ مجھے بچیوں کو اغوا کرنے میں ایک منٹ بھی نہیں لگتا ، حال ہی میں جس بچی کو اغوا کیا اُسے اغوا کرنے میں بھی ایک منٹ سے کم وقت لگا اور میں اُسے اپنے ساتھ رکشے میں بٹھا کرر گوجرانوالہ لے گئی۔پولیس کا کہناہے کہ شہر بھر میں ایسے کئی گروہ سرگرم ہیں جو کم سن بچیوں کو اغوا کرتے ہیں اور انہیں پال پوس کر اپنے غلیظ مقاصد کے لیے استعمال کرتے اور انہیں جسم فروشی کے دھندے پر لگا کر خود پیسے کماتے ہیں۔گروہ کی سر گرم خاتون نے اپنے بیان میں کہا کہ میں

کم عمر بچیوں کو اغوا ہی اسی لیے کرتی ہوں کہ وہ بڑی ہو کر میرا سہارا بنیں۔ میں ان کو بڑا کر کے دھندے کروا کر پیسے کمانا چاہتی تھی۔گروہ میں ملوث ایک نوجوان نے بھی اپنے اس غلیظ جُرم کا اعتراف کیا اور کہا کہ ہم بچیوں کو اغوا کر کے ان سے بُرے کام کرواتے ہیں اور پھر پیسے کماتے ہیں۔ گروہ کے گرفتار ہونے کے بعد شہر بھر کے والدین میں خوف و ہراس پھیل گیا ہے جبکہ گروہ سے بازیاب ہونے والی کم سن بچیوں کے والدین نے گروہ کے تمام ارکان کو عبرتناک سزا دینے کا مطالبہ کیا ہے۔ والدین کا کہنا ہے کہ ایسے تمام افراد کو دیگر تمام لوگوں کے لیے عبرت کا نشانہ بنایا جانا چاہئیے تاکہ دوبارہ کوئی کسی کی بیٹی کے بارے میں اس قدر گھناؤنے عزائم نہ رکھے۔واضح رہے کہ شہر بھر میں کم سن بچیوں کے اغوا اور زیادتی کے کیسز کی شرح میں اضافے کے بعد سے والدین بھی محتاط ہو گئے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *