تازہ ترین
ہوم / علاقائی / کوہاٹ کی مصروف ترین شاہراہ پر دن دھیاڑے معروف وکیل آصف بنگش کا قتل، پولیس کا روائی کرنے سے قاصر ، اہلخانہ سراپا احتجاج

کوہاٹ کی مصروف ترین شاہراہ پر دن دھیاڑے معروف وکیل آصف بنگش کا قتل، پولیس کا روائی کرنے سے قاصر ، اہلخانہ سراپا احتجاج

 

کوہاٹ(نمائندہ خصوصی)کوہاٹ کے گائوں میاں گڑھی سے ملحقہ ہائی وے پر یکم مارچ بروزجمعہ دن دھیاڑے ایڈوکیٹ آصف حسین بنگش کی گاڑی پر اندھا دھند فائرنگ کی گئی جس کے نتیجے میں ایڈوکیٹ آصف بنگش موقع پر ہی جان کی بازی ہار گئے۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ کہ جس ہائی وے پر قتل کیا گیاوہ افغانستان کی طرف جانیوانی ایک مصروف سڑک ہے جس پر ٹریفک مسلسل رواں دواں رہتی اور ہر وقت پولیس کا پہرہ رہتا ہے۔ اور جائے وقوعہ سے کچھ ہی فیصلے پر پولیس چوکی بھی ہے۔پولیس چوکی  ہونے کے باوجود صبح 10بجےمعروف وکیل کو فائرنگ کر کے قتل کیا جاتا ہے اورقاتلوں کا کوئی نشان نہیں ملتا اور نہ یہ پتہ چلتا ہے کہ وہ کس چیز پر سوار تھے اور نہ ہی ابھی تک وہاں موجود افراد میں سے کسی کا بیان قلم بند کیا گیا ہے۔واض رہے کہ اس جگہ پر اس سے قبل بھی بیشمار قتل کے

واقعات رونما ہوچکے ہیں لیکن تمام کیسز کو فرقہ وارانہ واقعات قرار یکر فائلوں کی نظر کیا جاتا رہا ہے۔ ایڈوکیٹ آصف بنگش کی لاش ابھی ہسپتال بھی نہیں پہچنی تھی کہ ضلعی پولیس کے PRO کی طرف سے بیان دیا جاتا ہے کہ قتل کسی پرانی دشمنی کی وجہ سے کیا گیا ہے جبکہ معروف وکیل کے اہلخانہ  ا کہنا ہے کہ ان کی کسی سے کوئی ذاتی دشمنی نہیں ہے۔اس کے بعد علاقے کے DPO اور DIG نہ ہسپتال آئے اور نہ انھوں نے جائے وقوعہ کا دورہ کیا۔واضع رہے کہ جائے وقوعہ وزیر مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی اور صوبائی وزیر تعلیم  ضیاء اللہ بنگش کا یونین کونسل ہے اور افسوس کی بات یہ کہ اب تک ان کی طرف سے کوئی مزمتی بیان سامنے نہیں آیا۔اہلخانہ کا حکام بالا سے مطالبہ ہے کہ ایڈوکیٹ آصف بنگش کے خون ناحق کاسراغ لگایا جائے اور قاتلوں کو قانون کے مطابق سزا دی جائے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *