تازہ ترین
ہوم / اہم خبریں / شریف خاندان کو ریلیف ملنے پر عدالتوں پر تنقید کرنا توہین عدالت ہے، فواد چوہدری نےعدالتی فیصلوں پر تنقید کرنے والوں کوآڑے ہاتھوں لے لیا

شریف خاندان کو ریلیف ملنے پر عدالتوں پر تنقید کرنا توہین عدالت ہے، فواد چوہدری نےعدالتی فیصلوں پر تنقید کرنے والوں کوآڑے ہاتھوں لے لیا

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی وزیراطلاعات فواد چودھری نے کہا ہے کہ شریف برادران کے ریلیف پرعدالتوں پر تنقید توہین عدالت ہے،یہ کہنا غلط ہے کہ عدالتیں کسی اسکیم کے تحت ریلیف دے رہی ہیں،قانون کا احترام سب پرلازم ہے،شریف برادران کوعارضی ریلیف ملاہے، ابھی شہبازشریف کے اصل کیسز پڑے ہیں۔ انہوں نے نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ شریف برادران کو ریلیف ملنے پر جوکہتے ہیں کہ شریف برادران کو ریلیف مل رہا ہے ،ان کو بنیادی قانون کا ہی پتا نہیں ہے۔ضمانت ایک عارضی ریلیف ہے لیکن اس کا مطلب یہ نہیں کہ ان کوبہت بڑا ریلیف مل گیا ہے۔ جیسے نوازشریف کو یہ ریلیف ملا کہ لٹ گئے، مر گئے،اگر چار ہفتوں میں باہر نہ نکالا گیا

توخدانخواستہ ان کی جان کوخطرہ ہوجائے گا۔جس پر ان کو چھ ہفتے کی ضمانت مل گئی۔شہبازشریف کے اصل کیسز تو ابھی عدالتوں میں پہنچیں ہی نہیں ہیں۔اس کے بعدعدالتوں کا ٹیسٹ ہوگا، جب ریلیف کی بات آئے گی توبات کریں گے۔لیکن ابھی عدالتوں سے متعلق کہنا کہ عدالتیں شریف خاندان کو ایک اسکیم کے تحت ریلیف دے رہی ہیں، یہ توہین عدالت ہے۔یہ قانون کا ایک نظام ہے ہم سب کو اس کا احترا م ہے۔فواد چودھری نے کہا کہ پہلی بار یہ ہے کہ کسی کوعدالت کا فیصلہ پسند آیا ہے یا نہیں آیا ہے یہ الگ بات ہے، لیکن ایک قانون ہے اور قانون پر عملدرآمد ہونا ہوتا ہے۔عدالتوں کے کچھ فیصلے پسند ہوتے ہیں کچھ پر اعتراض ہوتا ہے ،فواد چودھری نے کہاکہ اگر پی ٹی آئی یا عمران خان اتنے کمزور ہوگئے ہیں کہ یہ تینوں مل کرکچھ کرلیں گے توپھر عدالتی فیصلے نہیں دیکھے جاتے۔لیکن اس وقت لوگوں کو بے وقوف نہیں سمجھنا چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ ن لیگ اور پیپلزپارٹی بڑی جماعتیں ہیں ، یہ ادارے ہیں ان سے سیکھا جانا چاہیے، لیکن مسئلہ یہ ہے کہ ان جماعتوں کے پاس کوئی سوچ یا بیانیہ نہیں ہے،اس لیے لوگ آصف زرداری یا نوازشریف کے پیسے بچانے تونہیں نکلیں گے۔لوگوں کو معلوم ہے کہ یہ سب لوگوں کیلئے مہنگائی کیخلاف نہیں نکل رہے بلکہ اپنے اپنے ابوؤں کے پیسے بچانے کیلئے باہر نکل رہے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *