تازہ ترین
ہوم / صحت و تعلیم / تبدیلی آگئی! حکومت نے ڈیڑھ لاکھ سے زائد اساتذہ کو جبری ریٹائرڈ کرنے کا فیصلہ کرلیا،ملازمت کیلئے عمر کی نئی حد کتنی مقرر کردی گئی

تبدیلی آگئی! حکومت نے ڈیڑھ لاکھ سے زائد اساتذہ کو جبری ریٹائرڈ کرنے کا فیصلہ کرلیا،ملازمت کیلئے عمر کی نئی حد کتنی مقرر کردی گئی

لاہور(نیوز ڈیسک)محکمہ سکولز ایجوکیشن پنجاب نے 55 سال سے زائد عمرکے اساتذہ کوجبری ریٹائرڈ کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے، وزیراعلیٰ پنجاب کی منظوری کے بعد فیصلے پر عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے گا، فیصلے پرعملدرآمد سے پنجاب کے ڈیڑھ لاکھ اساتذہ ریٹائرہوجائیں گے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق ایڈیشنل سیکرٹری اسکولز پنجاب بینش فاطمہ کی سربراہی میں اہم اجلاس ہوا۔اجلاس میں ڈی پی آئی سکینڈری وایلیمنٹری سمیت دیگرافسران نے شرکت کی۔ بتایا گیا ہے کہ اجلاس میں محکمہ اسکول ایجوکیشن پنجاب نے 55 سال سے زائد عمرکے اساتذہ کوجبری ریٹائرڈ کرنے پرغور کیا، ذرائع کا کہنا ہے کہ اجلاس کی سفارشات کو وزیراعلیٰ پنجاب کو بھجوایا جائے گا۔ وزیراعلیٰ پنجاب کی

منظوری کے بعد اساتذہ کو جبری ریٹائرڈ کردیا جائے گا۔محکمہ اسکول ایجوکیشن پنجاب کے فیصلے پرعملدرآمد سے پنجاب کے ڈیڑھ لاکھ اساتذہ ریٹائرہوجائیں گے۔ دوسری جانب محکمہ تعلیم سکولز پنجاب نے اساتذہ کا ایک اہم مسئلہ حل کردیا ہے۔ محکمہ تعلیم پنجاب نے ہیڈ ٹیچرز، آئی ٹی ٹیچرزسمیت تمام اساتذہ کے ضلعی دفاترمیں کام کرنے پرپابندی عائد کردی ہے۔ محکمہ تعلیم کے جاری کردہ نوٹیفکیشن میں بتایا گیا ہے کہ اساتذہ اب صرف نصابی اورامتحانی ڈیوٹی ہی دیں گے۔دوسری جانب پنجاب ٹیچرز یونین پنجاب اور پنجاب گورنمنٹ سکولز ایسوسی ایسن آف کمپیوٹر ٹیچرز(پیکٹ) کا کہنا ہے کہ سیکرٹری سکول ایجوکیشن پنجاب نے اساتذہ کے مطالبے پر ہیڈ ٹیچرز، آئی ٹی ٹیچرز اور دیگر تمام اساتذہ کے ضلعی دفاتر میں کام کرنے پر پابندی عائد کر دی ہے۔ اساتذہ اب صرف نصابی، غیر نصابی اور امتحانی ڈیوٹی ہی دے سکیں گے۔ افسران کی طرف اساتذہ سے دفاتر کے کام کروانے پر پابندی عائد کر دی گی۔سیکرٹری سکولز کے اس فیصلہ سے طلبا کو فائدہ ہو گا اور سکولوں پڑھائی کا معیار بہتر ہوگا۔ سیکرٹری سکولز کے اس فیصلہ سے کئی اساتذہ کی سکولوں میں واپسی ہو گی۔ اس سے پہلے کئی اساتذہ ضلعی دفاتر میں ڈیوٹیاں سر انجام دے رہے ہیں۔ مزید برآں وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے’’ کابینہ کمیٹی برائے اردو سفارشات ‘‘ تشکیل دے دی ہے۔ کمیٹی تمام سرکاری تقریبات اور اجلاسوں کی کاروائی کو اردو زبان میں تحریر کرنے کی سفارشات مرتب کرے گی۔کمیٹی کی سفارشات کی روشنی میں اعلیٰ حکومتی عہدیداروں سمیت وزراء اور افسران اپنی تقاریر بھی اردو میں کریں۔ چھوٹی بڑی شاہراہواں پر نصب سائن بورڈز انگریزی کے ساتھ اردو میں بھی تحریر کیے جائیں۔ اسی طرح تمام معاملات اردو زبان میں کیے جائیں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *