تازہ ترین
ہوم / علاقائی / ’’پیسہ پھینک تماشہ دیکھ ‘‘این جی اوز کے دبائومیں پولیس اہلکاروں کا نام لیا تھا، راولپنڈی میں اجتماعی زیادتی کا نشانہ بننے والی لڑکی نے بھارتی رقم لیکر بیان بدل ڈالا، نئے بیان میں تہلکہ خیز انکشافات

’’پیسہ پھینک تماشہ دیکھ ‘‘این جی اوز کے دبائومیں پولیس اہلکاروں کا نام لیا تھا، راولپنڈی میں اجتماعی زیادتی کا نشانہ بننے والی لڑکی نے بھارتی رقم لیکر بیان بدل ڈالا، نئے بیان میں تہلکہ خیز انکشافات

راولپنڈی(مانیٹرنگ ڈیسک) 19مئی کو راولپنڈی میں تھانہ روات کے 3 پولیس اہلکاروں سمیت 4 ملزمان نے 22 سال کی لڑکی سے مبینہ اجتماعی زیادتی کی تھی ۔لڑکی کیساتھ اجتماعی زیادتی کامقدمہ درج کرلیا گیا اور چاروں ملزمان کو گرفتار کر لیا تھا اور لڑکی نے ان سب کو شناخت بھی کر لیا تھا جبکہ میڈیکل رہورٹ میں بھی زیادتی کی تصدیق ہو گئی تھی۔تھانہ روات کے ایس ایچ او راجہ اعزاز نے ملزمان کی گرفتاری کی تصدیق کرتے ہوئے بھی بتایا تھا کہ ملزمان نے لڑکی کو گزشتہ رات زیادتی کا نشانہ بنایا،انہوں نے بتایا تھا کہ زیادتی کا شکار ہونے والی مذکورہ لڑکی ہاسٹل کی رہائشی تھی۔لیکن اب زیادتی کا نشانہ بننے والی لڑکی نے بھاری رقم لے کر بیان بدل لیا۔لڑکی کا کہنا ہے کہ این جی اوز کے دباؤ میں پولیس اہلکاورں کا نام لیا تھا۔متاثرہ طالبہ جو کہ کال سینٹر میں ملازمت بھی کرتی ہے

نے دفعہ 164 کے تحت دوبارہ بیان کے لیے علاقہ مجسٹریٹ روات کو درخواست دے دی ہے۔ طالبہ نے درخواست میں موقف اپنایا ہے کہ اس کے 24 مئی کو دیے گئے بیان کو منسوخ تصور کیا جائے کیونکہ وہ اپنا بیان دوبارہ ریکارڈ کرانا چاہتی ہے۔ لڑکی نے کہا ہے کہ ایف آئی آر میں نامزد ملزمان اس واقعہ میں ملوث نہیں ہیں۔لڑکی نے کہا ہے کہ وہ ایف آئی آر کے اندراج سے پہلے ملزمان کے نام نہیں جانتی تھی اور اس نے ایف آئی آرمیں پولیس اوراین جی اوز کے فوکل پرسنز کے اکسانے پر ملزمان نامزد کیے تھے۔ اس حوالے سے قانونی ماہر راجہ نذیر ایڈووکیٹ کا کہنا ہے کہ لڑکی قانونی طور پر اپنا بیان تبدیل کر سکتی ہے لیکن اس حوالے سے فیصلہ عدالت کرے گی کہ یہ بیان دباوٴ کی وجہ سے تو تبدیل نہیں کیا گیا ہے۔ فی الحال زیادتی کا نشانہ بننے والی لڑکی نے بھاری رقم لے کر بیان بدل لیا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *