تازہ ترین
ہوم / اہم خبریں / سپریم جوڈیشل کونسل ججز کا احتساب کرے، سپریم بار کونسل میں قرارداد منظور، بڑا مطالبہ کردیا گیا

سپریم جوڈیشل کونسل ججز کا احتساب کرے، سپریم بار کونسل میں قرارداد منظور، بڑا مطالبہ کردیا گیا

لاہور(نیوز ڈیسک)سپریم کورٹ کے ججز کے احتساب کے معاملے پر سپریم بارکونسل تقسیم ہوگئی، وکلاءایکشن کمیٹی نے ججز کے احتساب کیلئے متفقہ قرارداد منظور کرلی،قرارداد میں سپریم جوڈیشل کونسل سے جلد از جلد ریفرنس کا فیصلہ کرنے کا مطالبہ کیا گیا،سینئر رکن پاکستان بار کونسل شفیق بھنڈارا نے کہا کہ سپریم جوڈیشنل کونسل ججز کا احتساب کرے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق وکلاء نمائندوں کا اجلاس ہوا۔ اجلاس سے سینئر ممبر پاکستان بار کونسل شفیق بھنڈارا نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان بارکونسل کے12جون کے اجلاس میں فیصلہ کیا جانا تھا لیکن مینڈیٹ سے ہٹ کرپہلے ہی فیصلہ سنا دیا گیا۔ ججز کیخلاف زیر التواء ریفرنسز جلد از جلد نمٹائے جائیں۔ وکیل دلیل سے بات کرتا ہے دھونس سے نہیں۔کوئی فرد قانون سے بالاتر نہیں ہے۔انہوں نے قرارداد میں سپریم جوڈیشل کونسل سے جلد از جلد ریفرنس کا فیصلہ کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ وکلاء نمائندہ اجلاس، وکلاءایکشن کمیٹی نے متفقہ قرارداد منظور کرلی۔ قرارداد کے متن میں

کہا گیا ہے کہ 8 جون کو وکلاء کی قرارداد کی مذمت کرتے ہیں۔ اداروں کو دھمکیاں دینے والوں کی مذمت کرتے ہیں۔ وزیرقانون اور اٹارنی جنرل سے استعفے کے مطالبے کی مخالفت کرتے ہیں۔صدر پاکستان نے آئین و قانون کے مطابق ججز کے خلاف ریفرنس سپریم جوڈیشل کونسل بھیجا۔ سپریم جوڈیشل کونسل ریفرنس کا آئین و قانون کے مطابق جلد میرٹ پر فیصلہ کرے۔ سپریم جوڈیشنل کونسل ججز کا احتساب کرے۔ ججز کے خلاف ریفرنسز کا سپریم جوڈیشل کونسل جلد از جلد میرٹ پر فیصلے کرے۔ بتایا گیا ہے کہ 8 جون کو چند وکلا نمائندگان نے اپنی سابقہ منظور شدہ قرارداد ’’احتساب سب کیلیے‘‘کی نفی کی۔یہ کنونشن اس کی بھرپور مذمت کرتا ہے۔ کوئی بھی جج یا دیگر عہدیدار آئین اور قانون سے بالا تر نہیں۔ سپریم جوڈیشل کونسل کسی دباؤ کے بغیر آئین و قانون کے مطابق دائر شدہ ریفرنسز کا فیصلہ کرے۔ وکلا سپریم جوڈیشنل کونسل کے ساتھ کھڑے ہیں۔ ججز اور ممبران سپریم جوڈیشل کونسل کو دھمکیاں دینے والوں کی بھرپور مذمت کی جاتی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *