تازہ ترین
ہوم / صحت و تعلیم / وزیراعظم ہاؤس کو اسلام آباد نیشنل یونیورسٹی میں تبدیل کرنے کا منصوبہ شروع ہونے سے پہلے ہی ختم، بڑا یوٹرن لے لیا گیا

وزیراعظم ہاؤس کو اسلام آباد نیشنل یونیورسٹی میں تبدیل کرنے کا منصوبہ شروع ہونے سے پہلے ہی ختم، بڑا یوٹرن لے لیا گیا

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم ہاؤس کو یونیورسٹی میں تبدیل کرنے کا منصوبہ ختم کر دیا گیا۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ وزیراعظم ہاؤس میں اسلام آباد نیشنل یونیورسٹی کے قیام کا منصوبہ ختم کر دیا گیا ہے۔یونیورسٹی کا جنوری میں افتتاح کیا گیا تھا جس پر تین کروڑ روپے خرچ آیا تھا۔میڈیا رپورٹس میں مزید بتایا گیا ہے کہ وزیراعظم ہاؤس میں یونیورسٹی کے قیام کے لیے ایچ ای سی نے فزیبلٹی رپورٹ،آرڈیننس اورپی سی ون تیار کیا تھا لیکن نئے مالی سال کے لیے حکومت نے اس منصوبے کے لیے کوئی رقم مختص نہیں کی۔ذرائع کے مطابق اب وزارت سائنس اینڈ ٹیکنالوجی وزیراعظم ہاؤس میں انجینئرنگ یونیورسٹی قائم کرے گی جس کی نگرانی ڈاکٹر عطاالرحمن کریں گے۔اس سے قبل بھی وزیراعظم ہاؤس کو ٹیکنالوجی یونیورسٹی قرار دینے کی تجویز پیش کی گئی تھی۔کامسیٹس یونیورسٹی اسلام آباد کے ریکٹر ڈاکٹر راحیل قمر نے کہا تھا کہ میری ذاتی رائے ہے کہ وزیر اعظم ہاؤس میں

مستقبل کی ٹیکنالوجی کی تدریسی جامعہ قائم کی جائے۔جامعات کی معاونت سے حکومت اگلے 5 سال میں ایک کروڑ ملازمتوں کی فراہمی کا وعدہ پورا کر سکتی ہے۔ خیال رہے وزیراعظم ہاؤس کی عمارت کو یونیورسٹی میں تبدیل کرنے کا منصوبہ سیکورٹی اور قانونی پیچید گیوں کے سبب پہلے ہی کھٹائی میں پڑ گیا تھا۔یا،وزیراعظم ہاؤس میں ہونے اور اسلام آباد کے ماسٹر پلان میں اس زمین و عمارت کی حیثیت میں کسی ممکنہ تبدیلی کے سبب کیپٹیل ڈیولپمنٹ اتھارٹی اسلام آباد نے پرائم منسٹر ہاؤس کی عمارت کو یونیورسٹی میں منتقل کرنے کی تجویز پر اعتراض لگایا تھا، جس کے بعد ایچ ای سی نے وزیراعظم ہاؤس کی عمارت کو نیورسٹی میں منتقل کرنے کے منصوبے پر کام بظاہر روک دیا تھا۔واضح رہے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین اور وزیراعظم عمران خان نے قوم سے پہلے خطاب میں کہا تھا کہ وزیراعظم ہاؤس میں نہیں رہوں گا بلکہ وہاں ایک یونیورسٹی قائم کی جائے گی تاہم یہ وعدہ اب تک پورا نہ ہو سکا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *