تازہ ترین
ہوم / پاکستان / ارشد ملک کی مبینہ ویڈیو کا معاملہ سنی لیون تک جاپہنچا،آخر ویڈیو کس قدر غیراخلاقی تھی جو جج بلیک میل ہوگئے، جانئے

ارشد ملک کی مبینہ ویڈیو کا معاملہ سنی لیون تک جاپہنچا،آخر ویڈیو کس قدر غیراخلاقی تھی جو جج بلیک میل ہوگئے، جانئے

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)سینئرتجزیہ نگار ایاز امیر کا جج ارشد ملک کی مبینہ ویڈیو کہنا ہے کہ فی الحال صرف مریم نواز کے لگائے ہوئے الزامات ہیں۔ اس تمام معاملے میں مریم نواز کا موقف کچھ اور ہے اور ارشد ملک کا کچھ اور۔ایاز امیر کا کہنا ہے کہ میں یہ نہیں کہہ رہا کہ وہ ویڈیو جعلی تھی بلکہ وہ و یڈیو اخلاق سے گری ہوئی تھی۔اور کہا گیا کہ گن پوائنٹ پر ویڈیو نہیں بن گئی، وہ ویڈیو دیکھیں معلوم ہو گا کہ اتنی تو بندوق بھی نہیں لگتی۔ جج ارشد ملک کو جس ویڈیو سے بلیک میل کیا گیا وہ اس وقت کی تھی جب وہ ملتان میں تعینات تھے اور و ہ اپنی وہ ویڈیو دیکھ کر حیران رہ گئے تھے۔وہ انتہائی غیر اخلاقی ویڈیو تھی۔جج

ارشد ملک یہ نہیں کہہ رہے کہ اس ویڈیو میں سنی لیون تھی بلکہ وہ مان رہے ہیں کہ ان کی ویڈیو ہے جس کی بنا پر انہوں نے جج ارشد ملک ڈرایا دھمکایا اور خریدنے کی کوشش کی۔ایاز امیر نے کہا کہ ارشد ملک نے کہا کہ میں تو وہ ویڈیو دیکھ کر بھی حیران رہ گیا۔ ۔یاد رہے اسلام آباد ہائیکورٹ نے احتسابعدالت کے جج ارشد ملک کو ویڈیو سکینڈل کے بعد عہدے سے ہٹا دیا تھا، وزارت قانون نے احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کو ہٹانے سے متعلق نوٹیفکیشن جاری کردیا ہے ، اسلام آباد ہائیکورٹ کے قائم مقام چیف جسٹس عامر فاروق تین نام وزارت قانون کو بھیجیں گے، جس کے بعد وزارت قانون ایک نام فائنل کر کے نوٹیفکیشن جاری کردے گی. احتساب عدالت نمبر ایک کے جج محمد بشیر کوعدالت نمبر 2 کا قائم مقام جج مقرر کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔اس حوالے سے اسلا آباد ہائیکورٹ نے وزارت قانون کو سفارش بھجوا دی ہے۔قائم مقامچیف جسٹس عامر فاروق کی ہدایت پر رجسٹرار ہائیکورٹ نے خط لکھ دیا ہے۔یاد رہے مبینہ ویڈیو کے معاملے پر قائم مقام چیف جسٹس اسلام آبادہائی کورٹ کی جانب سے وزارت قانون کوخط لکھا تھا، جس میں کہا گیا تھا کہ جج ارشدملک کے بیان کونوازشریف کیس سے منسلک کیاجائے اور وزارت قانون جج ارشدملک کی خدمات واپس لے. مبینہ ویڈیو کے معاملے پر اسلام آباد کی احتساب عدالت کے جج ارشدملک کو عہدے سے ہٹانےکا فیصلہ کیا تھا‘اس سے قبل جج ارشدملک نے اسلام آبادہائی کورٹکےرجسٹرارسے ملاقات کی اورمبینہ وڈیوپربیان حلفی کےساتھ جواب جمع کرایا تھا ، جس میں جج ارشدملک نے کہا تھا ان کےخلاف پروپیگنڈا کیاجا رہا ہے اور انھیں بلاوجہ بدنام کیا جارہا ہے، حلفیہ کہتا ہوں میرا اس ویڈیو سے کوئی تعلق نہیں، ویڈیو کوایڈٹ کرکے چلایا گیاہے. واضح رہے مریم نواز پریس کانفرنس میں احتساب عدالت کے جج کی خفیہ کیمرے سے بنی مبینہ ویڈیو سامنے لے آئیں تھیں ، جاری کردہ احتساب عدالت کےجج ارشد ملک کی مبینہ ویڈیو میں کہا جارہا ہے کہ نوازشریف کےساتھ زیادتی اورناانصافی ہوئی.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *