تازہ ترین
ہوم / پاکستان / بھارت کے ہاتھوں مظلم کشمیریوں کی نسل کشی، وفاقی وزیر نےپاک فوج کی مدد لینے کا عندیہ دیدیا

بھارت کے ہاتھوں مظلم کشمیریوں کی نسل کشی، وفاقی وزیر نےپاک فوج کی مدد لینے کا عندیہ دیدیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)وفاقی وزیرانسانی حقوق شیریں مزاری نے کہا ہے کہ کشمیریوں کی نسل کشی جنگ یا عالمی جدوجہد سے روکی جاسکتی، نازی طرز کی حکومت سے مذاکرات نہیں ہوسکتے،آسام میں 4 لاکھ مسلمانوں کی شہریت ختم کی جا رہی ہے، دنیا دوسرا ہٹلرقبول نہیں کرے گی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی سے وزیرانسانی حقوق شیریں مزاری نے ملاقات کی۔جس میں کشمیرمیں جاری انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں سمیت مختلف امورپرتبادلہ خیال کیا گیا۔ شیریں مزاری نے وزیرخارجہ کو وزارت انسانی حقوق کی جانب سےکی گئی کاوشوں سے آگاہ کیا۔ وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ انسانی حقوق کی عالمی تنظیمیں اس ظلم وبربریت کو بےنقاب کر رہی ہیں۔عالمی برادری نہتے کشمیریوں پرجاری مظالم کورکوانے کے لیے اپنا کردار ادا کرے۔

اس موقع پر شیریں مزاری نے کہا کہ کشمیر میں نسل کشی روکنے کیلئے 2 طریقے ہوسکتے ہیں۔ ایک تو جنگ اور دوسرا دنیا کو کشمیر کی صورتحال سے آگاہ کرنا ہے۔ دنیا دوسرا ہٹلرقبول نہیں کرے گی۔ یورپی ممالک نے دیکھا کہ ہٹلر نے ان کے ساتھ کیا کیا۔ بھارت میں اقلیتوں کے ساتھ ظلم ہورہا ہے۔ آسام میں 4 لاکھ مسلمانوں کی شہریت ختم کی جا رہی ہے۔ شیریں مزاری نے کہا کہ ایٹمی جنگ میں ہار جیت نہیں ہوتی، صرف ہار ہی ہار ہوتی ہے۔اگردنیا نوٹس نہیں لے گی تو جنگ سے بھارت کو روکا جا سکتا ہے۔ نازی طرز کی حکومت سے کیسے مذاکرات ہوسکتے ہیں۔ وفاقی وزیرانسانی حقوق شیریں مزاری نے کہا کہ ہمیں بہت سے چیلنجز کا سامنا ہے۔ اپوزیشن پر ہم نے کیسز نہیں بنائے یہ کیسز ماضی کے ہیں۔ نیب خودمختار ادارہ ہے۔ ہمارے کنٹرول میں نہیں ہے۔ پارلیمانی سسٹم میں قوانین بننے میں وقت لگتا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *