تازہ ترین
ہوم / انٹرنیشنل / امریکہ اپنے اس فیصلے پر پچھتائے گا،افغان طالبان نے بڑی دھمکی دیدی

امریکہ اپنے اس فیصلے پر پچھتائے گا،افغان طالبان نے بڑی دھمکی دیدی

کابل(مانیٹرنگ ڈیسک) افغان طالبان نے امریکہ کی جانب سے مذاکرات منسوخ کئے جانے پر امریکہ کو خبردار کرتے ہوئے کہا کہ مذاکرات کی منسوخی پر امریکہ پچھتائے گا کیونکہ اس نے غلطی کی ہے۔ ترجمان طالبان ذبیح اللہ مجاہد نے غیر ملکی خبر رساں ادارے الجزیرہ کو دیئے گئے انٹرویو میں کہا کہ افغانستان میں قیام امن کے لیے ان کے پاس جہاد اور مذاکرات کے علاوہ کوئی راستہ نہیں ہے۔انہوں نے افغانستان میں جہاد جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ اگر امریکہ مذاکرات کے لیے راضی نہیں تو وہ غیر ملکی فوجوں کے خلاف مسلحہ جنگ جاری رکھیں گے۔طالبان کے ترجمان نے خبردار کیا کہ مذاکرات کی منسوخی پر واشنگٹن پچھتائے گا۔ بات چیت ہو یا لڑائی، مقصد غیر ملکی افواج کو افغانستان سے نکالنا ہے۔امریکہ نے بات چیت کا راستہ بند کیا ، اب لڑائی کا راستہ ہی باقی بچا ہے۔جبکہ افغان صدر اشرف

غنی نے ایک بار پھر طالبان سے جنگ بندی کا مطالبہ کیا ہے تاکہ عوام کو نقصان سے بچایا جا سکے۔ جبکہ امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیونے کہا کہ گذشتہ دس دنوں کے اندر ہزاروں طالبان جنگجو امریکی افواج کے ہاتھوں مارے جا چکے ہیں۔ یاد رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے افغانستان میں قیام امن کے لیے جاری مذاکراتی عمل منسوخ کردیا تھا۔مائیکروبلاگنگ ویب سائٹ ٹویٹر پر امریکی صدر نے اپنے پیغام میں مذاکرات منسوخ ہونے کا سبب کابل میں ہونے والے حملوں کو قرار دیا تھا۔ یہ اعلان امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے اُس وقت کیا گیا تھا جب چند گھنٹے بعد افغان طالبان اور امریکہ کے درمیان دوحہ میں ہونے والے مذاکرات کا 9 واں دور شروع ہونے والا تھا۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اس فیصلے کے بعد افغانستان میں امن کے امکانات خطرے میں پڑ گئے ہیں جس پر تشویش کا اظہار کیا جا رہا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *