ہوم / علاقائی / راولپنڈی میں طالبہ سے اجتماعی زیادتی کاکیس،عدالت نے3پولیس اہلکاروں سمیت چاروں ملزمان کو بری کردیا

راولپنڈی میں طالبہ سے اجتماعی زیادتی کاکیس،عدالت نے3پولیس اہلکاروں سمیت چاروں ملزمان کو بری کردیا

راولپنڈی (نیوز ڈیسک) عدالت نے تھانہ روات کی حدود میں رافعہ بی بی کے اغواء و زیادتی کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے چاروں پولیس اہلکاروں کو بری کردیا۔ایڈیشنل سیشن جج مسعود وڑائچ نے رافعہ بی بی اغواء و زیادتی کیس کی سماعت کی۔ عدالت نے پولیس کے چاروں کانسٹیبلنز راشد، عامر، عظیم اور نصیر کو باعزت بری کرتے ہوئے کہا کہ کوئی جرم ثابت نہیں ہوا اور فرانزک رپورٹ بھی منفی آئی۔واضح رہے کہ رواں سال 18 مئی کو خاتون رافعہ نے 4 پولیس اہلکاروں پر اغوا و اجتماعی زیادتی کا مقدمہ درج کرایا تھا تاہم بعد میں وہ اپنے دعوے سے منحرف ہوگئی تھی اور پولیس اہلکاروں پر مقدمہ واپس لے لیا تھا۔مقدمہ 16 مئی 2019ء میں تھانہ واردات میں 4 افراد کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا تھا۔تاہم آج سیشن عدالت نے تین پولیس اہلکاروں سمیت چاروں ملزمان کو بری کر دیا ہے۔خیال رہے کہ متاثرہ لڑکی کو 15 مئی

کو اس وقت مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بنایا گیا جب وہ اپنی دوست کے ساتھ سحری کرنے کے لیے جا رہی تھی۔راستے میں چار افراد نے اسلحے کے زور پر روکا اور گاڑی میں بٹھا لیا تھا جب کہ متاثرہ لڑکی کی دوست کو بھگا دیا۔ لڑکی نے الزام عائد کیا تھا کہ اسے گاڑی میں اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا ۔ملزمان نے لڑکی سے زیادتی کرنے کے بعد رقم اور طلائی انگوٹھی چھین لی تھی جب کہ ہاسٹل کے باہر پھینک کر فرار ہو گئے تھے۔پولیس حکام کے مطابق ابتدائی میڈیکل رپورٹ کے مطابق لڑکی کے جسم پر تشدد کے نشانات پائے گئے تھے۔ واقعے میں ملوث تینوں پولیس اہلکاروں کو بھی معطل کر دیا گیا ہ تھا۔متاثرہ خاندان نے الزام عائد کیا تھا کہ کہ ان کو دھمکیاں موصول ہو رہی تھیں جب کہ صلح کے لیے دباؤ بھی ڈالا جا رہا تھا۔ملزمان کے خلاف جن دفعات کے تحت مقدمہ درج کیا گیا وہ ناقابل ضمانت تھیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *