عرب ممالک اور ایران میں ٹھن گئی، خاموش نہیں بیٹھیں گے، سعودی عرب نے سخت پیغام دیدیا

قاہرہ(نیوز ڈیسک)سعودی عرب نے عرب لیگ کے اجلاس میں رکن ممالک کو خبردار کردیا کہ وہ ایرانی جارحیت کے سامنے خاموش نہیں کھڑے رہیں گے جبکہ بحرین نے موقف پیش کیا کہ لبنان پر حزب اللہ کا مکمل قبضہ ہے۔مصر کے دارالحکومت قاہرہ میں منعقدہ عرب لیگ کے ہنگامی اجلاس میں سعودی عرب اور بحرین کے وزرائے خارجہ نے خطاب میں ایران اور لبنان کے کردار پر شدید تشویش کا اظہار کیا۔ہنگامی اجلاس سے اپنے خطاب میںسعودی عرب کے وزیرخارجہ عادل الجبیر نے ایران کو خبردار کرتے ہوئے کہا کہ ریاض، ایرانی جارحیت

کے سامنے بت بنا کھڑا نہیں رہے گا۔انہوںنے کہا کہ سعودی عرب اپنے عوام کو محفوظ رکھنے اور قومی سلامتی کے دفاع کے لیے ہچکچاہٹ کا شکار نہیں ہوگا۔ ایران عرب ممالک کی قومی سلامتی کو نقصان پہنچانے کی سازشیں مسلسل جاری رکھے ہوئے ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہماری قومی سلامتی کے خلاف ایران کی دشمنانہ سازشوں کو ہرصورت میں روکنا ہوگا۔عادل الجبیر نے کہا کہ ایران اپنے حزب اللہ اور حوثی باغیوں جیسے ایجنٹوں کی مدد سے عرب خطے کو نقصان پہنچا رہا ہے اور اس نے تمام عالمی اصولوں کو دیوار پر دے مارا ہے۔انہوں نے کہا کہ ایران نے سعودی عرب کے مقدس مقامات تک کا خیال نہیں کیا اور میزائلوں کے ذریعے مکہ معظمہ کو نشانہ بنانے سے بھی باز نہیں آیا۔سعودی عرب ایران کی ان تمام دشمنانہ سرگرمیوں سے آگاہ ہے اور پوری قوت سے ان کا جواب دے گا۔سعودی وزیرخارجہ نے کہا کہ مکہ معظمہ اور الریاض پر ایران کے میزائل حملے تہران کی سعودیہ کے خلاف دشمنی کا واضح ثبوت ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایرانی مداخلت کے نتیجے میں خطے کو شدید خطرات لاحق ہیں۔عرب لیگ کے اجلاس سے قبل سعودی وزیرخارجہ نے کہا کہ مجھے بھروسہ ہے کہ لیگ کے اراکین ذمہ داری لیں گے اور ایران کی جانب سے عرب کی سیکیورٹی کی خلاف ورزیوں کے حوالے سے کوئی فیصلہ کریں گے۔عرب لیگ کے اجلاس سے خطاب میں بحرین کے وزیرخارجہ خالد بن احمد بن محمد آل خلیفہ نے کہا کہ لبنان پر دہشت گرد گروپ حزب اللہ نے تسلط قائم کر رکھا ہے۔انہوں نے کہا کہ خطے میں ایران نے اپنے کئی دست وبازو بنا رکھے ہیں حزب اللہ بھی ایران کا ایک بازو ہے۔بحرینی وزیرخارجہ نے کہا کہ حزب اللہ نہ صرف لبنان کی سرحد کے اندر کارروائی کرتی ہے بلکہ ہم تمام ملکوں کی سرحدوں کو پار کرتی ہے جو عرب قومی سلامتی کے لیے خطرہ ہے۔انہوں نے عرب لیگ کے اراکین سے مطالبہ کیا ہے کہ حزب اللہ حکومت کی شراکت دار ہے اس لیے ذمہ داری کا مظاہرہ کرے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں