ڈاکٹر عبدالقدیر کی دو باتیں

ڈاکٹر عبدالقدیرخان اپنی یادداشت میں لکھتے ہیں جب مرحوم بھٹو صاحب نے مجھے یورینیم کی افزودگی کرنے کے فرائض سونپے تو میں نے کہوٹہ میں دو باتوں کا بہت خیال رکھا۔ اول تو یہ کہ ہر بلڈنگ میں نمایاں جگہ پر بانی پاکستان قائد اعظمؒ کی تصویر لگوائی تاکہ ہم یہ نہ بھولیں کہ ہم کس کے مرہون منت ہیں،کہ آزاد ہیں اور اپنی مرضی سے زندگی گزار رہے ہیں اور دوم یہ کہ میں نے عمارات میں بھی اور باہر بھی فرمان الٰہی اور احادیث اور اقوالِ خلفائے راشدین

کے بورڈ بنواکے لگوائے تاکہ ہم اللہ تعالیٰ اور اس کی نعمتوں کو یاد رکھیں اور احادیث اور اقوالُ و خلفائے راشدین سے رہنمائی حاصل کرتے رہیں.میں نے بہت نمایاں طور پر سورة اشُعرآء کی 83 سے 85 تک آیات اور ان کا ترجمہ فریم کر کے لگوایا . ان آیات مبارکہ کا ترجمہ یہ ہے:”اے پروردگارمجھے علم و دانش عطا فرما اور نیکوکاروں میں شامل کر اور آئندہ نسلوں میں میرا ذکر نیکی کرنے والوں میں شامل کر اور مجھے جنت الفردوس کے وارثوں میں شامل کر۔

اپنا تبصرہ بھیجیں