سوئٹزرلینڈ سے معاہدہ، منی لانڈرنگ کرنے والوں کے خلاف گھیرا تنگ،وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے خبردار کردیا

0

ملتان (نیوز ڈیسک)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ فرانس اور سوئٹزرلینڈ سے معلومات کے تبادلے کا معاہدہ مثبت قدم ہوگا جس کے تحت منی لانڈرنگ کرنے والوں کے خلاف گھیرا تنگ ہوگا۔ملتان میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے مختلف امور پر بات کی اور کہا کہ فرانس اور سوئٹزرلینڈ سے معلومات کے تبادلے کا معاہدہ مثبت اقدام ہوگا جس کے تحت منی لانڈرنگ کرنے والوں کے خلاف گھیرا تنگ ہوگا۔وزیر خارجہ نے کہا کہ معاہدے سے قومی خزانے سے لوٹی گئی رقم کی واپسی میں معاونت ملےگی جبکہ پاکستان میں احتساب کا عمل بہتر ہوگا اور ملک میں کرپشن ختم ہوگی۔اپنی گفتگو کے دوران شاہ محمود

قریشی نے کہا کہ دنیا افغان امن عمل میں پاکستان کے تعمیری کردار اور اس موقف کو تسلیم کرچکی ہے کہ افغانستان کے مسئلے کا کوئی عسکری حل نہیں۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستان ابتدا ہی سے افغانستان میں مکمل امن کا خواہش مند رہا اور ہمیشہ تجویز دی کہ سیاسی مفاہمت سے افغان مسئلہ حل کیا جاسکتا ہے۔شاہ محمود قریشی نے بتایا کہ ترکی میں امریکی نائب سیکریٹری سے ملاقات ہوئی اور ایلس ویلز نے پاک-افغان تجارتی حجم بڑھانے پر زور دیا۔انہوں نے بتایا کہ میں نے ایلس ویلز سے مطالبہ کیا کہ افغانستان میں ایپکس کا اجلاس متوقع ہے، لہٰذا تجارت اور اقتصادیات، رابطہ کاری کا ایک ورکنگ گروپ ایسے ایجنڈے میں لے کر آئیں تاکہ اس پر بات چیت شروع ہو سکے۔بات کو آگے بڑھاتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ایلس ویلز نے افغانستان میں حالیہ صدراتی انتخاب سے متعلق بھی بات کی۔دوران گفتگو شاہ وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ ‘پاکستان نے ان صدارتی انتخاب میں کوئی مداخلت نہیں کی بلکہ ہر ممکن سہولت پہنچائی’۔شاہ محمود قریشی نے بتایا کہ ‘افغان حکام کی درخواست پر طورخم پر کارگو کی نقل و حرکت کو بہتر اور آسان بنانے کے لیے سرحد 24 گھنٹے کھلی ہے’۔افغان امن عمل پر بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ امریکا اور طالبان سے مذاکرات کامیاب ہونے کے بعد انٹرا افغان مذاکرات ضروری ہیں۔انہوں نے کہا کہ کابل کی طرف سے بعض مسائل پر سخت موقف آتا ہے اور ہم بھی ترکی بہ ترکی جواب دے سکتے ہیں لیکن سازگار ماحول قائم رکھنے کے لیے جواب دینے سے گریز کرتے ہیں۔