تبدیلی آئی رے ۔۔۔ تحریر: نعیم ثاقب

قرآن کریم فرقان حمید میں ارشاد باری تعالیٰ ہے اللہ تعالی کسی قوم کی حالت نہیں بدلتا جب تک وہ خود اپنی حالت نہ بدلے "عمل پسند لوگ تدبیر محنت اور لگن سے کامیابی حاصل کرتے ہیں جبکہ تصوراتی دنیا کے باسی خیالی پلاؤ سے پیٹ بھرنے اور جذباتی نعروں سے تقدیر بدلنے کی آس میں زندگی گزار دیتے ہیں آج کے کالم میں نہ تو ان لوگوں کی بات ہوگی جو بھٹو کو زندہ رکھنے کی خواہش میں خود بھوکے مر جاتے ہیں اور نہ ہی ان لوگوں کا تذکرہ ہے جو ووٹ کو عزت دینے کے چکر میں اپنی عزت بھی گنوا بیٹھتے ہیں اور نہ ہی تبدیل کے شیدائی ان نوجوانوں کا ذکر کروں گا جن کے لیے نئے پاکستان کی دیوانگی اب شرمندگی اور حیرانگی میں بدلتی جا رہی ہے بلکہ آج پاکستان کے چند ایسے گھرانوں کی داستان بیان کروں گا جن کے باسیوں نے اپنے عزم ،جدوجہد اور مستقل مزاجی سے سے خود اپنے لیے اور اپنے خاندان کے لیے حقیقی تبدیلی کی بنیاد رکھی ۔سب سے پہلے تبدیلی کو گھر کی لونڈی بنانے والی وہ پانچ بہنیں جن کو میڈیا شیر بہنوں کے نام سے یاد کرتا ہے ملک رفیق اعوان جو واپڈا سے ایس ڈی او ریٹائرڈ ہیں۔ ان کی سب سے بڑی بیٹی لیلیٰ ملک شیر نے سنہ 2008 میں سی ایس ایس کا امتحان پاس کیا تھا ۔لیلیٰ ملک شیر اس وقت کراچی میں انکم ٹیکس کے محکمے میں ڈپٹی کمشنر کے فرائض ادا کر رہی ہیں۔

انھوں نے بی اے تک تعلیم حاصل کرنے کے بعد 21 سال اور کچھ دن کی عمر میں سی ایس ایس کے امتحان میں کامیابی حاصل کر کے پاکستان کی سب سے کم عمر سی ایس پی افسر بننے کا اعزاز حاصل کیا تھا-اس کے بعد شیریں ملک شیر کی باری آتی ہے جو آج کل نیشنل ہائی وے اتھارٹی اسلام آباد میں ڈائریکٹر ہیں۔تیسری بہن سسی ملک شیر ڈپٹی ایگزیکٹو سی ای او چکلالہ کینٹ راولپنڈی ہیں اور پھر ماروی ملک شیر جو بطور ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر ایبٹ آباد فرائض ادا کر رہی ہیں۔ضحیٰ ملک سب سے چھوٹی بہن ہیں اور 17 جون کو جاری کیے جانے والے نتائج کے مطابق وہ آفیسرز مینجمنٹ گروپ میں شمولیت اختیار کریں گی۔ان پانچ بہنوں نے تعلیم کے میدان میں وہ کارنامہ سر انجام دیا کہ تمام والدین اپنے بچوں کو ان کی مثالیں دے رہےہیں۔

سول سروسز میں جپھہ برادران کو کون نہیں جانتا بھوانہ ضلع چنیوٹ سے تعلق رکھنے والے مرحوم پروفیسر محمد انور خاں کے سات بیٹے ہیں جن میں سے چھ راوین ہیں سب سے بڑا محمدانور جپھہ ڈی سی جہلم تعینات ہیں اس کے بعد اسد طاہر جپھہ ایڈیشنل کمشنر فیصل آباد ،ظفر حیدر جپھہ ایڈیشنل کمیشنر ایف بی آر ،شکیل انور جپھہ ایڈیشنل کمشنر ایف بی آر ،ظہیر احمد جپھہ اے ڈی سی جی اور چھٹے بھائی میجر نوید انور جپھہ جو فوج میں ہے یہ خاندان اپنی محنت اور لگن سے تبدیلی کی زندہ مثال بن گئے ہیں ۔ عارفوالہ کے رانا برادران کا نام بھی بیوروکریسی میں اجنبی نہیں رانا محمد انوار کے چار بیٹوں نے سی ایس ایس کیا سب سے بڑے رانا معصوم پولیس میں بطور ایس ایس پی فرائض سر انجام دے رہے ہیں ان کے بعد رانا غلام خالق آفس مینجمنٹ گروپ سے تعلق رکھتے ہیں اور ایل ڈی اے میں بطور ڈائریکٹر کام کر رہے ہیں اس کے بعد ان ابوسعید جن کا تعلق آڈٹ اینڈ اکاؤنٹس گروپ سے ہے اس کے بعد رانا ابوبکر جو پاکستان ایڈمنسٹریٹو سروسز گروپ میں ہے، ان چار بھائیوں کی کامیابی نے پاکستانیوں کو تبدیلی کے مفہوم سے أشنا کروادیا ۔

اوکاڑہ کے چھوٹے سے گھر سے مرحوم محمد افضل کے بیٹوں نے بھی باپ سے محنت اور ایمانداری کےپڑھےھوۓسبق کے ساتھ تبدیلی کے سفر کا آغاز کیامرشد کے خاندان کا ذکر کرنا ان کی چابلوسی کی پجائے حقیقت پسندی ہے جن لوگوں کو نہیں پتا ان کو بتاتا چلوں کہ مرشد کا اصل نام نوید کاشف ہے اور یہ بطور ایم ڈی ایک بڑے میڈیا گروپ میں کام کر رہے ہیںان کا پورا خاندان بھی تبدیلی کی ایک نادر مثال ہے مرشد نے انجینئرنگ کی پی سی ایس کے بعد بطور مجسٹریٹ کام کرتے رہے سرکاری نوکری چھوڑ کر میڈیا میں أ گئےہے ان کی بیوی بطور ایڈیشنل سیکرٹری پنجاب میں تعینات ان سے چھوٹے نوید آصف انجینرنگ کرنے کے بعد ناروے میں پی ایچ ڈی کر رہے ہیں سب سے چھوٹے نوید عاطف جنہوں نے کنگ ایڈورڈ میڈیکل کالج سے ایم بی بی ایس کیا اس کے بعد سی ایس ایس کر کے پولیس میں بطور ایس ایس پی اسلام آباد اپنی خدمات سرانجام دے رہے ہیں ان کی بیوی بھی سی ایس ایس کے بعد فارن سروسز میں ڈیوٹی کر رہی ھے یہ فیملی بھی مثبت تبدیلی کی عملی تصویر ہے ۔یہ اور ایسے بہت سے وہ خاندان جنہوں وسائل کی کمی کو سر پر سوار نہیں کیا مستقل مزاجی سے تبدیلی کے سفر پر چلتے ہوئے منزل مقصود تک پہنچ گئے یہ وہ لوگ ہیں جنہوں نے اپنے عملُ سے بتایا کہ تبدیلی باتوں سے نہیں مضبوط ارادوں سے آتی ھے اس کے لیے سوچ کا مثبت ھونا بھی بہت ضروری ہے ۔ جہد مسلسل ،ایمانداری ، خلوص نیت ، تنقید کو برداشت کرنے کا حوصلہ ، اور مقصد کے حصول کے لیے راستے اور لوگوں کا درست انتخاب ہی تبدیلی کے آغاز اور کامیابی کی بنیاد ھے پھر حقیقت میں تبدیلی آ بھی جاتی ھے۔دکھائی بھی دیتی ھے اور کسی کے چاہنے سےرکتی بھی نہیں ۔فیڈ بیک اس نمبر پر بذریعہ واٹس ایپ بھیج سکتے ہیں 03009414944